spot_img

Columns

Columns

News

پاک فوج نے جنرل (ر) فیض حمید کے خلاف انکوائری کا آغاز کر دیا

پاک فوج نے سابق ڈائریکٹر جنرل آئی ایس آئی جنرل (ر) فیض حمید کے خلاف نجی ہاوسنگ سوسائٹی کے مالک کی درخواست پر انکوائری کا آغاز کر دیا ہے، جنرل (ر) فیض حمید پر الزام ہے کہ انہوں نے نجی ہاؤسنگ سوسائٹی کے خلاف دورانِ ملازمت اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کیا تھا۔

عمران خان کی حکومت سعودی عرب نے گِرائی تھی، شیر افضل مروت

عمران خان کی حکومت سعودی عرب نے گِرائی تھی، سعودی عرب اور امریکہ دو ممالک تھے جن کے تعاون سے رجیم چینج آپریشن مکمل ہوا، سعودی عرب کی جانب سے پاکستان کیلئے معاشی تعاون بھی اسی پلاننگ کا حصہ ہے۔راہنما تحریکِ انصاف شیر افضل مروت

فیض آباد دھرنا کمیشن ایک مذاق تھا، اس کمیشن کی کوئی وقعت نہیں ہے۔ وزیرِ دفاع خواجہ آصف

جنرل (ر) باجوہ نے مجھے دھمکی دی ہے کہ میں نے باتیں بیان کیں تو ٹانگوں پر کھڑا نہ ہو سکوں گا، جنرل (ر) باجوہ اور جنرل (ر) فیض حمید فیض آباد دھرنا کمیشن میں پیش نہیں ہوئے، فیض آباد دھرنا کمیشن ایک مذاق تھا، اس کمیشن کی کوئی وقعت نہیں ہے۔

سعودی عرب پاکستان کی معاشی ترقی کیلئے اپنا کردار ادا کرے گا، سعودی وزیرِ خارجہ شہزادہ فیصل

سعودی عرب پاکستان کی معاشی ترقی کیلئے اپنا کردار ادا کرے گا، جلد سرمایہ کاری میں پیش رفت ہو گی۔ سعودی وزیرِ خارجہسعودی عرب کی جانب سے بڑی سرمایہ کاری کا خیر مقدم کرتے ہیں، سعودی سرمایہ کاروں کو تمام سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ وزیرِ خارجہ اسحاق ڈار

جنرل (ر) باجوہ میرے خلاف ہیروئن کے جعلی کیس میں براہِ راست ملوث تھا، رانا ثناء اللّٰہ

میرے خلاف ہیروئن کے جعلی کیس میں جنرل (ر) قمر جاوید باجوہ براہِ راست ملوث تھا، عمران خان نے پارلیمنٹ کی منظوری کے بغیر اگست میں ہی جنرل (ر) باجوہ کو توسیع دے دی تھی، میاں نواز شریف نے کہا کہ اب محاذ آرائی بےسود ہے۔
Op-Edپاکستان، بھٹو، اور سفارتکاری کی واپسی
spot_img

پاکستان، بھٹو، اور سفارتکاری کی واپسی

Danish Arain
Danish Arain
Danish Arain is a Karachi-based civil engineer who formerly hosted The People's Show on Star News.
spot_img

الیکشن 2018 میں تحریک انصاف دیگر جماعتوں کیساتھ ملکر حکومت بنانے میں کامیاب رہی اورتخت و تاج عمران خان کے حصے میں آیا، اپنے پونے چارسالہ دور میں ملکی معیشت، امن و امان کے ساتھ جو ہوا وہ سب کے سامنے ہے مگر ملک کی پہلی دفاعی لائن خارجہ امور/پالیسی کیساتھ جو گھناؤنا کھیل کھیلا گیا وہ ناقابل تلافی ہے۔ قریبی دوست ممالک چین،سعودی عرب، ترکی و دیگر ممالک کو اپنی نابلد پالیسی کیوجہ سے دور کردیا گیا جو کہ پاکستان کو بین الاقوامی تنہائی کا شکار کرگیا۔ سی پیک کے معاملات میں غیر ضروری رکاوٹیں کھڑی کرکے دیرینہ دوست چین کو ناراض کیا گیا ہو یا سعودی عرب کو خوش کرنے کیلیے ترکی و ملائشیا کو دور کرنا یا پھر سائفر کو اپنی ذاتی مقاصد کے حصول کیلیے استعمال کرکے امریکہ سے دوری پیدا کرنا، یہی نہیں بلکہ ناتجربہ کاری و ناکارہ پالیسز سے عالمی مالیاتی اداروں کو سخت رویہ اختیار کرنے پر مجبور کرنا۔

اس ہائیبرڈ رجیم کے ناقابل تلافی جرم کیخلاف جمہوری جماعتوں کے اتحاد و جمہوری طریقہ کار سے اپریل کے اوائل میں تبدیلی سرکار کی حکومت کا سورج غروب ہوا جو کہ ایک اندھیری رات میں روشنی کی کرن ثابت ہوا، ملک کی بھاگ دوڈ سنبھالتے ہی ن لیگ،پیپلزپارٹی و دیگر جماعتوں سے بننے والی اتحادی حکومت نے سنگین مسائل کے حل کیلیے کوششیں شروع کردی جس میں سرفہرست خارجہ امور تھے جسکی ذمہ داری کم عمر نوجوان چئیرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے حصے آگئی، اپنی سیاسی بصیرت،خاندانی میراث و قابلیت کو بروئے کار لاتے ہوئے انتہائی قلیل عرصے میں پاکستان کی خارجہ پالیسی کو سیدھی راہ پر گامزن کرکے پاکستان کو عالمی تنہائی سے نکال کر اپنی قائدانہ صلاحیتوں کا لوہا منوایا۔ چونتیس سالہ نوجوان بلاول بھٹو نے ناصرف اقوام متحدہ ودیگر عالمی اداروں میں پاکستان کے وقار کو بلند کیا بلکہ دوست ممالک چین، سعودی عرب، ترکی،امریکہ ودیگر ممالک سے عمران دور میں پیدا کی جانے والی دوریاں ختم کرکے باہمی تعلقات کو فروغ دیا۔ حال ہی میں پاکستان میں عالمی موسمیاتی تبدیلیوں کیوجہ سے آنے والے سیلاب کا مقدمہ مدبرانہ طریقے سے لڑا جسکی مثال 75 سالہ تاریخ میں نہیں ملتی، کامیاب حکمت عملی کی بدولت دنیا بھر کے سفیروں و اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل اونتونیو گوئیرس نے ناصرف سیلاب متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا بلکہ پاکستان کے موقف کو تسلیم کیا۔ اسی خارجہ پالیسی کی بنیاد پر دنیا بھر سے روزانہ کی بنیاد پر امدادی سامان پاکستان پہنچ رہا ہے بلکہ امریکہ، جرمنی و دیگر ممالک نے کئی ملین ڈالر امداد کا بھی اعلان کیا ہے۔

کشمیر میں جاری بھارتی جارحیت پر جامع اور جرات مندانہ پالیسی اپنانے کیوجہ سے اقوام عالم میں پاکستان کے موقف کو تقویت ملی بلکہ کئی مملک کیطرف سے کشمیر کے مسئلے کو اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق حل کرنے پر زور دیا گیا (حال ہی میں جرمن وزیرخارجہ کا بیان اسکی عکاسی کرتا ہے۔)

کامیاب پالیسی جسکی وجہ سے اندھیری راتوں میں روشنی کی کرن نظر آئی وہ سابق وزیراعظم عمران خان و وزیر سابق خارجہ شاہ محمود کی بے چینی کا باعث بھی بنی جسکا اظہار وہ وقتا فوقتا کرتے نظر آتے ہی۔

خارجہ پالیسی ایک ہنر ہے جو کہ سیاسی تربیت و میراث سے ملتا ہے اور جس ماہرانہ انداز سے بلاول بھٹو اسے انجام دے رہے وہ انکی قابلیت کی عکاسی کرتا ہے اور یہی وہ قابلیت ہے جسکی بدولت و عالمی رہنماؤں کے اجلاس کی صدارت بھی کر رہے ہیں، عالمی اداروں سے اپنی شرائط پر ملکی قرضوں میں رعائیت بھی حاصل کررہے ہیں اور پاکستان کو اسکا کھویا ہوا وقار بھی دلوا رہے ہیں۔

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments

Read more

نواز شریف کو سی پیک بنانے کے جرم کی سزا دی گئی

نواز شریف کو ایوانِ اقتدار سے بے دخل کرنے میں اس وقت کی اسٹیبلشمنٹ بھرپور طریقے سے شامل تھی۔ تاریخی شواہد منصہ شہود پر ہیں کہ عمران خان کو برسرِ اقتدار لانے کے لیے جنرل باجوہ اور جنرل فیض حمید نے اہم کردارادا کیا۔

ثاقب نثار کے جرائم

Saqib Nisar, the former Chief Justice of Pakistan, is the "worst judge in Pakistan's history," writes Hammad Hassan.

عمران خان کا ایجنڈا

ہم یہ نہیں چاہتے کہ ملک میں افراتفری انتشار پھیلے مگر عمران خان تمام حدیں کراس کر رہے ہیں۔

لوٹ کے بدھو گھر کو آ رہے ہیں

آستین میں بت چھپائے ان صاحب کو قوم کے حقیقی منتخب نمائندوں نے ان کا زہر نکال کر آئینی طریقے سے حکومت سے نو دو گیارہ کیا تو یہ قوم اور اداروں کی آستین کا سانپ بن گئے اور آٹھ آٹھ آنسو روتے ہوئے ہر کسی پر تین حرف بھیجنے لگے۔

حسن نثار! جواب حاضر ہے

Hammad Hassan pens an open letter to Hassan Nisar, relaying his gripes with the controversial journalist.

#JusticeForWomen

In this essay, Reham Khan discusses the overbearing patriarchal systems which plague modern societies.
error: