Columns

Columns

News

پاکستان اور آذربائجان کے مابین جے ایف 17 لڑاکا طیاروں کا تاریخی معاہدہ طے پا گیا

پاکستان اور آذربائجان کی فضائیہ کے مابین 1 اعشاریہ 6 ارب ڈالرز میں جے ایف 17 سی بلاک تھری لڑاکا طیاروں کا ایک بڑا اور تاریخی برآمدی معاہدہ طے پا گیا ہے جبکہ اس معاہدہ میں طیارے، تربیت اور گولہ بارود شامل ہیں۔

مسلم لیگ (ن) قومی اسمبلی میں 108 ارکان کے ساتھ سب سے بڑی جماعت بن گئی

مسلم لیگ (ن) قومی اسمبلی میں سب سے بڑی جماعت، مسلم لیگ (ن) کو 24 جبکہ پیپلز پارٹی کو 14 مخصوص و اقلیتی نشستیں الاٹ، مسلم لیگ (ن) کے ارکان کی مجموعی تعداد 108 جبکہ پیپلز پارٹی کے ارکان کی مجموعی تعداد 68 ہو گئی، سنی اتحاد کونسل کے 81 ارکان ہیں۔

پنجاب کی نامزد وزیراعلی مریم نواز نے اسمبلی رکنیت کا حلف اٹھا لیا

پنجاب کی نامزد خاتون وزیراعلی مریم نواز نے پنجاب اسمبلی کی رکنیت کا حلف اٹھا لیا ہے۔ مریم نواز کا کہنا ہے کہ وہ امید کرتی ہیں کہ اب پنجاب میں خدمت کے ایک نئے دور کا آغاز ہوگا۔

سابق کمشنر راولپنڈی لیاقت چٹھہ نے غلط بیانی کا اعتراف کرتے ہوئے قوم سے معافی مانگ لی

میں نے ایک سیاسی جماعت کے بہکانے پر غلط بیان دیا تھا جو صریحاً غیر ذمہ دارانہ عمل تھا، اس منصوبے کو ایک سیاسی جماعت کی بھرپور حمایت حاصل ہے، چیف جسٹس کا نام جان بوجھ کر شامل کیا گیا، قوم سے معافی چاہتا ہوں۔

حضرت محمدﷺ اللّٰه کے آخری نبی ہیں اور انکو تمام جہانوں کیلئے رحمت بنا کر بھیجا گیا ہے، چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

نبی آخر الزماں حضرت محمدﷺ کو تمام جہانوں کیلئے رحمت بنا کر بھیجا گیا ہے، آپﷺ صرف مسلمانوں کیلئے نہیں بلکہ تمام انسانوں سمیت اللّٰه کی تمام مخلوقات کیلئے بھی رحمت ہیں، آپﷺ کے بعد اب کوئی نبی اور رسول نہیں آئے گا اور اسکے بعد بات ختم ہوجاتی ہے۔
NewsroomEconomyروپے اور پٹرول کی قیمت پر ڈکٹیشن نہیں لے سکتے، اسحاق ڈار

روپے اور پٹرول کی قیمت پر ڈکٹیشن نہیں لے سکتے، اسحاق ڈار

آئی ایم ایف کے کہنے پر اپنی عوام پر مزید نہیں ڈالا جاسکتا ہمیں ان سے دوٹوک بات کرنا ہوگی پہلے بھی دو دفعہ ہم نے بات کر کے مسئلے کا حل نکالا تھا اب بھی ان شا اللہ نکالیں گے ان سے بات کرنے کا حوصلہ ہونا چاہیے۔

TT Staff Reporter
TT Staff Reporter
Breaking stories from The Thursday Times' in-house reporter.
spot_img

سابق وزیرخزانہ اور سینیٹراسحاق ڈار کا کہنا ہے کہ جوتحریک انصاف نے ملکی معیشت کی حالت کردی تھی اسکے بعد حکومت میں آنا مسلم لیگ ن اور اسکے اتحادیوں کیلئے ایک مشکل فیصلہ تھا لیکن اس بری حالت کے بعد تحریک انصاف کو مزید وقت دینا ممکن نہیں تھا اسی لیے متحدہ اپوزیشن نے حکومت میں آنے کا مشکل فیصلہ کیا اور متحدہ اپوزیشن اس بات پر متفق ہے کہ جو ضروری چیزیں جن میں سرفہرست الیکشن ریفارمز شامل ہں انکوکرکے جلد از جلد عام انتخابات کی جانب بڑھا جائے۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کا بھی یہی موقف ہے کہ جلد صاف شفاف انتخابات ہونے چاہییں تاکہ عوام کوآزادی سے اپنے نمائندے چننے کا حق مل سکے۔

ن لیگی سینیٹر نے کہا کہ روز مرزہ ضروریات کیلئے آٹا سب سے ضروری چیز ہے جسکے لیے وزیراعظم شہباز شریف نے اعلان کیا ہے کہ اسکی قیمت کو کم کیا جائیگا اورانہوں نے پختونخواہ میں بھی آٹے کی قیمتوں کو پنجاب کی سطح پر لانے کا اعلان کیا ہے۔

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کے کہنے پر اپنی عوام پر مزید نہیں ڈالا جاسکتا ہمیں ان سے دوٹوک بات کرنا ہوگی پہلے بھی دو دفعہ ہم نے بات کر کے مسئلے کا حل نکالا تھا اب بھی ان شا اللہ نکالیں گے ان سے بات کرنے کا حوصلہ ہونا چاہیے انہوں نے کہا آئی ایم ایف کے کہنے پرعوام پر ڈیزل کی قیمت میں 70 روپے اور پٹرول کی قیمت 29 میں روپے اضافہ کا بم نہیں گرایا جاسکتا ہمیں اپنے ملک اور عوام کودیکھنا اور انکے متعلق سوچنا ہے۔

سابق وزیرخزانہ نے اس موقع پر کہا کہ کیا ڈالر کی قیمت کو 187 پر ن لیگ یا اتحادی حکومت لیکر گئی ہے اس سب کا ذمہ دار کون ہے؟ یہ وہی ہیں جنہوں نے اسکو اس بلند قیمت تک پہنچایا اور روپے کا بیڑہ غرق کردیا انکا مزید کہنا تھا کہ تحریک انصاف والے کہتے ہیں کہ ہم نے ملک کی ایکسپورٹس بڑھائی ہیں اگر دیکھا جائے تو انہوں نے صرف 800 ملین کی ایکسپورٹس بڑھا کر ملک کا بیس بلین ڈالر کا نقصان کردیا گیا اورانکی نااہلی کیوجہ سے ملک کا چار ہزار ارب کا قرضہ صرف ایک بیوقوفی کی وجہ سے بڑھ گیا ہے اور وہ ہے روپے کو کھلا چھوڑنا۔

ن لیگی سینیٹر نے اس موقع پر مزید کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں پچھلی حکومت کیطرف سے آنیوالی نئی حکومت کو بہترین معاشی اشاریے جو ملے وہ ن لیگ کی حکومت کی طرف سے 2018 میں تحریک انصاف کو ملے جو انہوں نے اپنی نااہلی سے سب کچھ کا بیڑہ غرق کردیا۔

اسحاق ڈارکا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کہتی تھی کہ اسحاق ڈار مصنوعی طریقہ سے ڈالر کو کنٹرول کرنے کیلئے ہر ماہ دو بلین ڈالر جھونکتا ہے اگر ایسا تھا تو پھر تحریک انصاف کی 43 ماہ کی حکومت میں 86 بلین ڈالر کی بچت ہونی چاہیے تھی وہ پیسہ پھر کدھر ہے اس سب سے پتہ چلتا ہے کہ انکی یہ باتیں سب جھوٹ کا پلندہ تھیں۔

اس موقع پر اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ جب 2013 میں ہم آئے تو پنڈی کے ایک سیاستدان نے کہا کہ اگر یہ سو سے نیچے لے آئے تو میں استعفی دیے دونگا سیاست چھوڑ دونگا لیکن پھر اس کو استعفی دینے کی آج تک توفیق نہیں ہوئی۔

اسحاق ڈٓر نے کہا کہ ہم فارن ڈکٹیشن لیکر اپنے فیصلے نہیں کرسکتے اور نہ کرنے چاہییں ہمیں سمجھنا چاہیے کہ کسی بین الاقوامی ادارے کو یہ حق نہیں کہ وہ ہمیں بتائے کہ ہماری کرنسی کی قیمت کیا ہونی چاہیے ہمیں اپنے ملک اور اسکے حالات کو دیکھنا چاہیے ہمیں اپنے ملک کو دیکھنا ہے اپنے ملک کے لوگوں کی تکالیف کو سامنے رکھتے ہوئے فیصلے کرنے ہونگے۔

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments

Read more

نواز شریف کو سی پیک بنانے کے جرم کی سزا دی گئی

نواز شریف کو ایوانِ اقتدار سے بے دخل کرنے میں اس وقت کی اسٹیبلشمنٹ بھرپور طریقے سے شامل تھی۔ تاریخی شواہد منصہ شہود پر ہیں کہ عمران خان کو برسرِ اقتدار لانے کے لیے جنرل باجوہ اور جنرل فیض حمید نے اہم کردارادا کیا۔

ثاقب نثار کے جرائم

Saqib Nisar, the former Chief Justice of Pakistan, is the "worst judge in Pakistan's history," writes Hammad Hassan.

عمران خان کا ایجنڈا

ہم یہ نہیں چاہتے کہ ملک میں افراتفری انتشار پھیلے مگر عمران خان تمام حدیں کراس کر رہے ہیں۔

لوٹ کے بدھو گھر کو آ رہے ہیں

آستین میں بت چھپائے ان صاحب کو قوم کے حقیقی منتخب نمائندوں نے ان کا زہر نکال کر آئینی طریقے سے حکومت سے نو دو گیارہ کیا تو یہ قوم اور اداروں کی آستین کا سانپ بن گئے اور آٹھ آٹھ آنسو روتے ہوئے ہر کسی پر تین حرف بھیجنے لگے۔

حسن نثار! جواب حاضر ہے

Hammad Hassan pens an open letter to Hassan Nisar, relaying his gripes with the controversial journalist.

#JusticeForWomen

In this essay, Reham Khan discusses the overbearing patriarchal systems which plague modern societies.
error: