spot_img

Columns

Columns

News

آئرش وزیراعظم نے فلسطین کو بطور ریاست تسلیم کرنے کا اعلان کر دیا

آئرلینڈ نے فلسطین کو بطور ریاست تسلیم کرنے کا اعلان کر دیا، ناورے اور سپین بھی فلسطین کو بطور ریاست تسلیم کر رہے ہیں جبکہ اسرائیل نے فوری طور پر آئرلینڈ اور ناروے سے اپنے سفیروں کو واپس بلا لیا ہے۔

سینیٹر فیصل واوڈا نے سینیٹ میں جسٹس اطہر من اللّٰہ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کر دیا

جج اطہر من اللّٰہ نے مجھے پراکسی کہا، ایک جج کیسے یہ جرأت کر سکتا ہے کہ وہ سینیٹر کو پراکسی کہے؟ جج نے ایوان کی توہین کی ہے، میں سینیٹ سے اطہر من اللّٰہ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرتا ہوں، سینیٹر فیصل واوڈا۔

عالمی عدالتِ انصاف نے بنجمن نیتن یاہو اور یحییٰ سنوار کے وارنٹ گرفتاری طلب کر لیے

عالمی عدالتِ انصاف (آئی سی سی) نے اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو، اسرائیلی وزیرِ دفاع یوو گیلنٹ اور حماس راہنماؤں یحییٰ سنوار، محمد دیاب المصیری و اسماعیل ہنیہ کے وارنٹ گرفتاری طلب کر لیے۔

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق ہو گئے

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کا ہیلی کاپٹر ایرانی علاقہ آذربائیجان میں گر کر تباہ، حادثہ میں ایرانی صدر، وزیرِ خارجہ حسین امیر، مشرقی آذربائجان کے گورنر ملک رحمتی اور صوبہ میں ایرانی صدر کے نمائندے آیت اللہ علی سمیت تمام افراد جاں بحق ہو گئے۔

وزیرِ اعلٰی پنجاب مریم نواز شریف نے ’’نواز شریف آئی ٹی سٹی‘‘ کا سنگ بنیاد رکھ دیا

وزیر اعلٰی پنجاب مریم نواز شریف نے پاکستان کے پہلے انفارمیشن ٹیکنالوجی منصوبے ’’نواز شریف آئی ٹی سٹی‘‘ کا افتتاح کر دیا۔ آئی ٹی سٹی کا نام نواز شریف کے نام پر رکھا گیا ہے کیونکہ نواز شریف ہی جدید پاکستان کے بانی ہیں۔
Opinionسو موٹو
spot_img

سو موٹو

Hammad Hassan
Hammad Hassan
Hammad Hassan has been a columnist for over twenty years, and currently writes for Jang.
spot_img

کوہاٹ جلسے میں ایک لاڈلے نے فرمائش کی اور فرح گوگی کی بجائے اپنے سیاسی مخالف اور منتخب وزیراعظم کے خلاف سپریم کورٹ کو کاروائی کرنے کی اپیل کی۔ تا ہم سوموٹو ایک معزز جج کے خط پر لیا گیا۔ یعنی اگر منتخب وزیراعظم کسی وفاقی ادارے میں اپنے آئینی اور انتظامی اختیارات استعمال کرتے ہوئے رد و بدل کا حکم دے تو اس پر عدالت عظمی سوموٹو ایکشن لیتے ہوئے مخصوص ججوں پر مشتمل بنچ تشکیل دے کر ”انصاف کا بول بالا“ کرے گا۔

لیکن ایک سوموٹو جسٹس وقار احمد سیٹھ مرحوم کی اس دلیر عدالت کو بھی درکار تھی۔ جس نے تاریخ کے بدترین آمر پرویز مشرف کو اس کے جرائم کی بنیاد پر غددار ڈکلیئر کرتے ہوئے نہ صرف پھانسی کی سزا سنائی بلکہ دو کی بجائے ایک پاکستان کی عملی طور پر بنیاد بھی رکھ دی تھی۔ لیکن فیصلہ تو کیا بلکہ پوری عدالت تک اڑا دی گئی۔ لیکن ملک کی آئین و قانون کو ہلا دینے والے اس واقعہ پر کوئی سوموٹو نہیں لیا گیا تھا۔ اربوں روپے کا پاپا جونز سکینڈل سامنے آیا. ملزم اس سے پہلے حساس ادارے میں بہت اہم پوزشینز پر رہا تھا سکینڈل طشت از بام ہونے کے وقت وہ حکومت کا مشیر اطلاعات بھی تھا اور سی پیک کا چیئرمین بھی۔ لیکن کاغذ کا ایک سادہ سا ٹکڑا وزیراعظم عمران خان کے سامنے رکھا گیا اور وزیراعظم ”مطمئن“ ہو گئے۔ عوام اور سوشل میڈیا نے چیخ چیخ کر آسمان سر پر اٹھا لیا لیکن نہ کوئی انکوائری ہوئی نہ نیب حرکت میں آیا۔ سوموٹو بھی سوتی رہی۔

٘راولپنڈی رنگ روڈ سکینڈل میں اربوں کا گھپلا پکڑا گیا اور سب سے بڑے ملزم کی نشاندہی وزیراعظم عمران خان کے ایک اور مشیر زلفی بخاری کے نام کی ہوئی لیکن کچھ دنوں بعد زلفی بخاری لندن ”بھیج“ دیے گئے غلام سرور خان بدستور وفاقی وزیر رہے اور رنگ روڈ سکینڈل کا گند قالین کے نیچے دھکیل دیا گیا۔ سوموٹو حسب توقع ندارد۔ برطانوی عدالت نے ملک ریاض اور مشیر احتساب شہزاد اکبر کا گھپلا پکڑا اور ڈیڑھ سو ارب کے قریب پیسے حکومت پاکستان کو دینے کا حکم دیا۔ اگلے دن وزیراعظم عمران خان نے ایک پر اسرار سا کاغذ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں لہرایا اور پلک جھپکتے میں وہ پیسے حیرت انگیز طور پر خزانے میں آنے کی بجائے ملک ریاض کے جیب میں چلے گئے۔ لیکن سوموٹو دور دور تک نظر نہیں آیا۔

فرح گوگی کے ہوش ربا سکینڈلز اور تباہ کن انتظامی مداخلت کی کہانیاں سامنے پڑی ہیں۔ ایک سوموٹو کا سوال یہاں بھی ہے۔

بدنام زمانہ پانامہ کے حوالے سے جج ارشد ملک جج کی اعترافی وڈیو بھی سامنے آئی جسٹس شمیم رانا کا بیان بھی سامنے آیا۔ سابق ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن ٹیلی ویژن چینلوں پر چیختا رہا کہ وزیراعظم عمران خان مجھ پر مسلسل دباؤ ڈالتا رہا کہ میرے مخالف سیاستدانوں پر کیسز (جھوٹے ہی سہی) بناوں اور انہیں جیلوں میں ڈالو ورنہ تمھارے لئے اچھا نہیں ہوگا۔ لیکن اس کے باوجود بھی کوئی سوموٹو دکھائی نہیں دیا۔ بدنام زمانہ ثاقب نثار کی ڈیم فنڈنگ اور اس میں اربوں کے گھپلوں کے معاملات سامنے آئے لیکن۔ سوموٹو کا انتظار تا حال جاری ہے۔

ایک سوموٹو وہاں بھی درکار تھا جب سینیٹ چیئرمین کےلئے ووٹنگ ہو رہی تھی۔ صاف ظاہر تھا کہ اپوزیشن ممبران کی تعداد چونسٹھ جبکہ اپوزیشن یعنی حکومتی ارکان کی تعداد اس سے آدمی یعنی چونتیس تھی۔ ظاہر ہے کہ چیئرمین اپوزیشن کا منتخب ہونا تھا لیکن ”چونتیس والے“ جیت گئے اور سنجرانی چیئرمین سینیٹ منتخب ہوئے۔ یہ انہونی کیسے ہو گئی؟ کاش کوئی سوموٹو لیتا اور اس بدبخت وطن میں طاقتوروں سے پوچھ گچھ کی ریت پڑ جاتی۔

ابھی مہینہ بھر پہلے ملک کے آئین و قانون کے ساتھ جو کچھ ہوتا رہا (بلکہ اب بھی جاری ہے) وہ سب کے سامنے ہے۔ قاسم سوری نے آئین اور پارلیمان کو بلڈوز کیا عمران خان سپریم کورٹ کے حکم کے سامنے جھکنے کی بجائے چند چپیڑوں کے سامنے جھکا۔ گورنر پنجاب آئین کو تماشا بنا گیا۔ حتی کہ صدر مملکت عارف علوی کسی ضدی بچے کی مانند آئین و قانون پر پاوں رکھتا اور عمران خان کو چمٹتا رہا۔ لیکن سوموٹو حسب عادت گہری نیند سوتی رہی۔ یہ ہے اس بدبخت ملک اور اس کے بد نصیب قوم کی کہانی۔ جو اب بھی چوراہوں پر ناچ ناچ کر اپنے اچھے مستقبل کے خواب دیکھ رہی ہیں۔

ایک بد ترین معاشرے کی سب سے بڑی نشانی یہ ہوتی ھے کہ وہاں انصاف کے ایوانوں پر سوالات اٹھنا شروع ہو جائیں۔ اسی لئے تو اس سلسلے میں یہ ملک ایک سو انتالیسویں نمبر پر پہنچ گیا ھے۔ حضرت علی (رض) نے بجا فرمایا تھا کہ معاشرہ کفر کے ساتھ زندہ رہ سکتا ھے لیکن ظلم کے ساتھ نہیں۔ لیکن اس وقت ایم سوال یہ ہے کہ کیا اس معاشرے کو ایک زندہ معاشرہ کہا جا سکتا ھے؟ انصاف کی فراہمی کے حوالے سے ایک سو انتالیسویں نمبر والا زندہ معاشرہ۔

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments

Read more

نواز شریف کو سی پیک بنانے کے جرم کی سزا دی گئی

نواز شریف کو ایوانِ اقتدار سے بے دخل کرنے میں اس وقت کی اسٹیبلشمنٹ بھرپور طریقے سے شامل تھی۔ تاریخی شواہد منصہ شہود پر ہیں کہ عمران خان کو برسرِ اقتدار لانے کے لیے جنرل باجوہ اور جنرل فیض حمید نے اہم کردارادا کیا۔

ثاقب نثار کے جرائم

Saqib Nisar, the former Chief Justice of Pakistan, is the "worst judge in Pakistan's history," writes Hammad Hassan.

عمران خان کا ایجنڈا

ہم یہ نہیں چاہتے کہ ملک میں افراتفری انتشار پھیلے مگر عمران خان تمام حدیں کراس کر رہے ہیں۔

لوٹ کے بدھو گھر کو آ رہے ہیں

آستین میں بت چھپائے ان صاحب کو قوم کے حقیقی منتخب نمائندوں نے ان کا زہر نکال کر آئینی طریقے سے حکومت سے نو دو گیارہ کیا تو یہ قوم اور اداروں کی آستین کا سانپ بن گئے اور آٹھ آٹھ آنسو روتے ہوئے ہر کسی پر تین حرف بھیجنے لگے۔

حسن نثار! جواب حاضر ہے

Hammad Hassan pens an open letter to Hassan Nisar, relaying his gripes with the controversial journalist.

#JusticeForWomen

In this essay, Reham Khan discusses the overbearing patriarchal systems which plague modern societies.
error: