spot_img

Columns

News

مستقبل کا راستہ چن لیا ہے، موجودہ آئی ایم ایف پروگرام آخری ہو گا۔ وزیراعظم شہباز شریف

مستقبل کا راستہ چن لیا ہے، وعدہ کرتا ہوں موجودہ آئی ایم ایف پروگرام آخری ہو گا، ایسے اداروں کا خاتمہ کیا جائے گا جو پاکستان پر بوجھ بن چکے، ماضی میں جب بھی ترقی کا سفر شروع ہوا کوئی حادثہ ہو گیا۔

خطبہِ حج 1445 ہجری، امام شیخ ماہر بن حمد المعیقلی

اے لوگو! اللّٰه سے ڈرو جیسے اس سے ڈرنے کا حق ہے، اللّٰه تعالٰی اپنی ذات میں واحد ہے، تمام مسلمان ایک دوسرے کے بھائی ہیں، والدین کا نافرمان نہ دنیا میں کامیاب ہو گا نہ آخرت میں، اللّٰه نے شرک کو حرام کر دیا، فلسطین کے مسلمانوں کیلئے دعا کرتا ہوں۔

عید سے قبل پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بڑی کمی کردی گئی

وزیراعظم شہباز شریف نے عید پر پیٹرول کی قیمت میں 10 روپے 20 پیسے اور ڈیزل کی قیمت میں 2 روپے 33 پیسے کمی کا اعلان کیا ہے۔ نئی قیمتیں آج رات 12 بجے سے نافذ ہوں گی۔ حکومت نے یکم جون کو بھی قیمتیں کم کی تھیں، جس سے عوام کو مجموعی طور پر 35 روپے کا ریلیف ملا ہے۔

عدلیہ میں اسٹیبلشمنٹ کی مداخلت کا خاتمہ جلد ہونے والا ہے، چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ

عدلیہ میں اسٹیبلشمنٹ کی مداخلت زیادہ ہے، یہ سلسلہ مولوی تمیز الدین کیس سے شروع ہوا، عدلیہ اس مداخلت کے خلاف جدوجہد کر رہی ہے اور جلد اس کا خاتمہ ہونے والا ہے، ایک جج کو کسی کا ڈر نہیں ہونا چاہیے۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ دنیا کی بہترین کارکردگی والی مارکیٹ بن گئی, امریکی جریدہ بلومبرگ

پاکستان اسٹاک مارکیٹ نے بہترین کارکردگی کی بنا پر ڈالر میں دنیا کی ٹاپ پرفارمر سٹاک مارکیٹ کا اعزاز حاصل کر لیا ہے، جس میں گزشتہ ایک برس کے دوران تقریباً دوگنا اضافہ ہوا ہے۔ اس اضافہ کو ملکی معیشت کے لیے مثبت اشارہ قرار دیا جا رہا ہے اور حکومتی اقدامات کی بدولت مستقبل میں مزید بہتری کی امید کی جا رہی ہے۔
spot_img
Newsroomتوہین عدالت تب ہوتی ہے جب عدالت سے عدل و انصاف نہیں...

توہین عدالت تب ہوتی ہے جب عدالت سے عدل و انصاف نہیں ہوتا اور کرپٹ ججز کو تحفظ دیا جاتا ہے، مریم نواز

عدل انصاف اور عدلیہ کی عزت اسکے فیصلوں سے ہوتی ہے اسکے فیصلے بولتے ہیں یہاں پر ٹرک بول رہے ہیں ججز کی بیگمات اور ان کے بچے بول رہے ہیں۔

spot_img

مسلم لیگ کی سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جو جو ناانصافیاں نواز شریف کے ساتھ ہوئیں انکے لیے جو عدل کے علیحدہ معیار قائم کیے گئے اس پر جو وکلا نے کردار ادا کیا وہ بہت لائق تحسین ہے اور انکے بیانیے کو جو کردار ادا کیا وہ ناقابل فراموش ہے یہ بات انہوں نے وکلا کے وفد سے بات کرتے ہوئے کہی۔

چیف آرگنائزر ن لیگ نے کہا کہ تحریک انصاف کی پوری سیاست تقرریوں کے گرد سہولتکاروں اور بیساکھیوں کے گرد گھومتی ہے اور انہوں نے کل لاہور کے جلسہ میں یہ بات کردی جو یہ چاہتے ہیں کہ الیکشن اکتوبر میں ہوئے تو تب تک موجودہ چیف جسٹس چلے جائینگے پہلے انکے ساتھ اسٹیبلشمنٹ کے کردار تھے جو جاچکے اب انہوں نے جیوڈیشل اسٹیبلشمنٹ ڈھونڈ لی ہے۔

مریم نواز نے اس موقع پر کہا کہ انکا ایک سہولتکار جنرل باجوہ جو اسکو لانے والا تھا اس نے کانوں کو ہاتھ لگایا  اور خود کہہ اٹھا کہ یہ پاکستان کیلئے خطرناک تھا اب اسکے لانے والوں کی جو باقیات عدلیہ میں موجود ہیں ان پر اب یہ تکیہ کرکے بیٹھا ہوا ہے۔ یہی جرل باجوہ کہتا ہے کہ ججز بیگمات کے کہنے پر اور انکے پریشر میں فیصلے کرتے ہیں۔

اس کا ثبوت پوری قوم نے دیکھا کہ جب نواز شریف کے کیس کا فیصلہ ہونا تھا تب پانامہ بنچ ججز کی بیگمات اور بچے عدالت میں موجود تھے اور انکو فیصلے کا پہلے ہی پتہ تھا، مریم نواز

ن لیگی لیڈر کا کہنا تھا کہ ایک شخص جس نے سرعام پاکستان کاقانون توڑا مذاق اڑایا اپنے پاوں تلے روندا عدالت پیش ہونے کے ڈر سے اپنے گھر میں چھپا رہا کبھی بیماری کا بہانہ کبھی پلستر کا بہانہ کبھی کہتا میری جان کو خطرہ ہے اور اگر گیا تو پھر جتھے لیکر عدالتوں پر حملہ آور ہوا ایسی سہولت پاکستان کی تاریخ میں کبھی کسی کو حاصل نہیں ہوئی۔

سینئر نائب صدر ن لیگ نے کہا کہ نواز شریف کا کیس دنیا کا واحد کیس ہے جس میں قانون کا سر شرم سے جھک گیا کہ ایک منتخب وزیراعظم کو بلیک لا ڈکشنری کا سہارا لیکر اسے گھر بھیج دیا گیا۔

مریم نواز نے کہا کہ عمران خان وہ شخص ہے جو عدالت کو بڑی ڈھٹائی کیساتھ flout کرتا ہے اور جب بھی عدالت جاتا ہے اسے تھوک کے حساب سے چند منٹوں میں ضمانتیں دے دی جاتی ہیں یہ ٹیرین کیس میں عدالت جانے سے ہی گریزاں ہے اور جب پولیس عدالت کے آرڈرز پر عمل درآمد کیلئےزمان پارک گئی تو ان پر پٹرول بم پھینکے گئے ان پر غلیلوں سے حملہ کیا گیا انکے سر پھاڑے گئے اس پر کیوں ایکشن نہیں ہوتا آئین قانون کہاں سو رہا ہے کون اس کو آج بھی تحفظ دے رہا ہے۔

مریم نواز نے کہا کہ آج اسے آئین یاد آگیا ہے اسے تب آئین کیوں یاد نہیں آیا جب اس نے قومی اسمبلی توڑ کر آئین کو روندا اور توڑا ایسے شخص پر تو آرٹیکل چھے لگتا ہے لیکن اسے تو کچھ نہیں کہا گیا کوئی سزا نہیں دی گئی لیکن نواز شریف کو تو ایک ایکسپائرڈ اقامہ کو بنیاد بنا کر نااہل کردیا گیا اسکی بیٹی سمیت پوری ن لیگ کی قیادت کو جیل ڈال دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ سوال یہ بنتا ہے کہ ایک ایسے شخص کو جس نے پاکستان کے آئین قانون جمہوریت اسمبلیوں اور جمہوریت کو کھیل سمجھا ہوا ہے اسکے فیصلوں پر یہ ملک کیسے چل سکتا ہے وہ جب چاہے اسمبلی توڑ دے تقرری کو متنازعہ بنا دے ملک میں انارکی پھیلا دے اور کیا اس پر پاکستان کی ریاست چپ کرکے تماشہ دیکھتی رہے گی۔

ن لیگی لیڈر نے کہا کہ پاکستان کے آئین کو از سر نو ایسے تحریر کیا گیا اسکو خود تحریر کرنے والے اسے جسٹیفائی کرنے سے قاصر ہیں جو آئین قانون عدلیہ اور عدل پر بہت بڑا کلنک ہے۔

مریم نواز نے اس موقع پر کہا کہ توہین عدالت تب ہوتی ہے جب عدالت سے عدل اور انصاف نہیں ہوتا اور کرپٹ ججز کو تحفظ دیا جاتا ہے انہوں نے کہا کہ جو متنازع نوٹ جسٹس مظاہر نقوی اور اعجازالاحسن نے لکھا اور متنازع سوموٹو لیا گیا جو متنازع بنچ بنایا گیا اس میں سہولتکاری شامل ہے جسٹس مظاہر نقوی  کے فنانشل معاملات کا سپریم جیوڈیشل کونسل میں کیس ہے لیکن الٹا انکو بنچ نمبر ایک میں ڈال دیا گیا ہے۔

چیف آرگنائزر ن لیگ نے کہا کہ جو آڈیو سامنے آئی ہے جس میں پہلی مرتبہ پاکستان کی تاریخ میں ٹرک کھڑا کرنے کا ذکر ہورہا ہےیاسمین راشد کہتی ہے سپریم کورٹ میں ہمارے بندے بیٹھے ہیں پرویز الہی کہتا ہے کہ اس بنچ میں میرا کیس لگاو اور جو اس ناانصافی کیخلاف آواز اٹھائے اس پر توہین عدالت لگا دی جاتی ہے۔ عدل انصاف اور عدلیہ کی عزت اسکے فیصلوں سے ہوتی ہے اسکے فیصلے بولتے ہیں یہاں پر ٹرک بول رہے ہیں ججز کی بیگمات اور ان کے بچے بول رہے ہیں۔

مریم نواز نے کہا کہ کیا پاکستان میں یہ روایت ہوگی ایک منشیات زدہ بیوقوف شخص کے فیصلوں کی وجہ سے ساڑھے چار بس بعد پنجاب اور پختونخواہ دو صوبوں کا الیکشن ہوگا اور پانچ برس بعد مرکز اور بقیہ صوبوں میں الیکشن ہونگے۔ انکا کہنا تھا کہ جب سے یہ فتنہ پاکستان کی سیاست میں آیا ہے تب سے پاکستان نے سکھ کا سانس نہیں لیا۔ جب نواز شریف کے دور میں ہر چیز بہتر جارہی تھی تو پھر کیوں اس نااہل کے حوالے ملک کو کیا گیا سوال اب سے نہیں ہوگا سوال 2017 سے ہوگا کیونکہ ملک کا زوال تب سے شروع ہوگیا تھا۔

Read more

میاں نواز شریف! یہ ملک بہت بدل چکا ہے

مسلم لیگ ن کے لوگوں پر جب عتاب ٹوٹا تو وہ ’نیویں نیویں‘ ہو کر مزاحمت کے دور میں مفاہمت کا پرچم گیٹ نمبر 4 کے سامنے لہرانے لگے۔ بہت سوں نے وزارتیں سنبھالیں اور سلیوٹ کرنے ’بڑے گھر‘ پہنچ گئے۔ بہت سے لوگ کارکنوں کو کوٹ لکھپت جیل کے باہر مظاہروں سے چوری چھپے منع کرتے رہے۔ بہت سے لوگ مریم نواز کو لیڈر تسیلم کرنے سے منکر رہے اور نواز شریف کی بیٹی کے خلاف سازشوں میں مصروف رہے۔

Celebrity sufferings

Reham Khan details her explosive marriage with Imran Khan and the challenges she endured during this difficult time.

نواز شریف کو سی پیک بنانے کے جرم کی سزا دی گئی

نواز شریف کو ایوانِ اقتدار سے بے دخل کرنے میں اس وقت کی اسٹیبلشمنٹ بھرپور طریقے سے شامل تھی۔ تاریخی شواہد منصہ شہود پر ہیں کہ عمران خان کو برسرِ اقتدار لانے کے لیے جنرل باجوہ اور جنرل فیض حمید نے اہم کردارادا کیا۔

ثاقب نثار کے جرائم

Saqib Nisar, the former Chief Justice of Pakistan, is the "worst judge in Pakistan's history," writes Hammad Hassan.

عمران خان کا ایجنڈا

ہم یہ نہیں چاہتے کہ ملک میں افراتفری انتشار پھیلے مگر عمران خان تمام حدیں کراس کر رہے ہیں۔

لوٹ کے بدھو گھر کو آ رہے ہیں

آستین میں بت چھپائے ان صاحب کو قوم کے حقیقی منتخب نمائندوں نے ان کا زہر نکال کر آئینی طریقے سے حکومت سے نو دو گیارہ کیا تو یہ قوم اور اداروں کی آستین کا سانپ بن گئے اور آٹھ آٹھ آنسو روتے ہوئے ہر کسی پر تین حرف بھیجنے لگے۔

حسن نثار! جواب حاضر ہے

Hammad Hassan pens an open letter to Hassan Nisar, relaying his gripes with the controversial journalist.

#JusticeForWomen

In this essay, Reham Khan discusses the overbearing patriarchal systems which plague modern societies.
spot_img
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
error: