spot_img

Columns

News

مستقبل کا راستہ چن لیا ہے، موجودہ آئی ایم ایف پروگرام آخری ہو گا۔ وزیراعظم شہباز شریف

مستقبل کا راستہ چن لیا ہے، وعدہ کرتا ہوں موجودہ آئی ایم ایف پروگرام آخری ہو گا، ایسے اداروں کا خاتمہ کیا جائے گا جو پاکستان پر بوجھ بن چکے، ماضی میں جب بھی ترقی کا سفر شروع ہوا کوئی حادثہ ہو گیا۔

خطبہِ حج 1445 ہجری، امام شیخ ماہر بن حمد المعیقلی

اے لوگو! اللّٰه سے ڈرو جیسے اس سے ڈرنے کا حق ہے، اللّٰه تعالٰی اپنی ذات میں واحد ہے، تمام مسلمان ایک دوسرے کے بھائی ہیں، والدین کا نافرمان نہ دنیا میں کامیاب ہو گا نہ آخرت میں، اللّٰه نے شرک کو حرام کر دیا، فلسطین کے مسلمانوں کیلئے دعا کرتا ہوں۔

عید سے قبل پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بڑی کمی کردی گئی

وزیراعظم شہباز شریف نے عید پر پیٹرول کی قیمت میں 10 روپے 20 پیسے اور ڈیزل کی قیمت میں 2 روپے 33 پیسے کمی کا اعلان کیا ہے۔ نئی قیمتیں آج رات 12 بجے سے نافذ ہوں گی۔ حکومت نے یکم جون کو بھی قیمتیں کم کی تھیں، جس سے عوام کو مجموعی طور پر 35 روپے کا ریلیف ملا ہے۔

عدلیہ میں اسٹیبلشمنٹ کی مداخلت کا خاتمہ جلد ہونے والا ہے، چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ

عدلیہ میں اسٹیبلشمنٹ کی مداخلت زیادہ ہے، یہ سلسلہ مولوی تمیز الدین کیس سے شروع ہوا، عدلیہ اس مداخلت کے خلاف جدوجہد کر رہی ہے اور جلد اس کا خاتمہ ہونے والا ہے، ایک جج کو کسی کا ڈر نہیں ہونا چاہیے۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ دنیا کی بہترین کارکردگی والی مارکیٹ بن گئی, امریکی جریدہ بلومبرگ

پاکستان اسٹاک مارکیٹ نے بہترین کارکردگی کی بنا پر ڈالر میں دنیا کی ٹاپ پرفارمر سٹاک مارکیٹ کا اعزاز حاصل کر لیا ہے، جس میں گزشتہ ایک برس کے دوران تقریباً دوگنا اضافہ ہوا ہے۔ اس اضافہ کو ملکی معیشت کے لیے مثبت اشارہ قرار دیا جا رہا ہے اور حکومتی اقدامات کی بدولت مستقبل میں مزید بہتری کی امید کی جا رہی ہے۔
spot_img
Newsroomنواز شریف کی سیاست اور جماعت کو ختم کرنے کی باتیں کرنے...

نواز شریف کی سیاست اور جماعت کو ختم کرنے کی باتیں کرنے والے خود کرچی کرچی ہو گئے، مریم نواز

نو مئی کو جو کچھ ہوا اور شہداء کے وارثوں کی آنکھوں میں جو آنسو آئے وہ ہم نہیں بھلا سکتے، جن والدین نے اپنا بیٹا دھرتی پر قربان کر دیا سوچو ان کا جذبہ کیا ہو گا، انہیں تکلیف پہنچانے والے کو پاکستانی قوم کبھی معاف نہیں کرے گی۔

spot_img

باغ—پاکستان مسلم لیگ نواز کی چیف آرگنائزر اور سینئر نائب صدر محترمہ مریم نواز شریف نے کشمیر کے ضلع باغ میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں کشمیر کی وادی میں کھڑی ہو کر آج اپنی بات کا آغاز شہداء کے ذکر سے کرنا چاہتی ہوں کیونکہ یہاں ہر گھر میں شہداء موجود ہیں، باغ آج ان شہداء کو سلام پیش کرتا ہے، باغ آج وادی کشمیر کے پہاڑوں پر کھڑے ان فوجی جوانوں کو سلام پیش کرتا ہے جو جان ہتھیلی پر رکھ کر آپ کی حفاظت کیلئے کھڑے ہیں، میں آج شہداء اور ان کے وارثوں کو سلام پیش کرتی ہوں، کشمیر کے شہداء کو سلام پیش کرتی ہوں، وطن پر اور اس مٹی پر جانیں قربان کرنے والوں کو سلام۔

مسلم لیگ نواز کی چیف آرگنائزر نے کہا کہ جو ہمارے شہداء کی توہین کرتا ہے، جو ہمارے شہداء کی بےحرمتی کرتا ہے، جو ہمارے شہداء کی یادگاروں کو جلاتا ہے، ہم بھی اس کا احترام نہیں کریں گے۔ آپ مجھے بتائیں کہ جو ہمارے شہداء کی بےحرمتی کرے، کیا وہ ہم میں سے ہو سکتا ہے؟ جو ہمارے شہداء کی یادگاروں کو آگ لگائے، کیا وہ ہم میں سے ہو سکتا ہے؟ جو ہمارے شہداء کی علامتوں کو نذرِ آتش کرے، کیا وہ ہم میں سے ہو سکتا ہے؟ جو ہمارے ان جنگی طیاروں کو جلائے جو دشمن کو مار گرانے کیلئے استعمال ہوئے تھے، کیا وہ ہم میں سے ہو سکتا ہے؟ جو شہداء کے مجسمے توڑ کر زمین پر پھینک دے، کیا وہ ہم میں سے ہو سکتا ہے؟ ایسا شخص ہم میں سے نہیں ہو سکتا اور وہ پاکستانی بھی نہیں ہو سکتا۔

مریم نواز شریف کا کہنا تھا کہ کوئی جتنا بھی غصہ میں ہو، جتنا بھی پرتشدد ہو اور جتنا بھی جذباتی ہو مگر اپنے وطن کو آگ لگانے کا نہیں سوچ سکتا، کوئی ایسی ہمت اور جرأت نہیں کر سکتا مگر 9 مئی کو جو کچھ ہوا اور شہداء کے وارثوں کی آنکھوں میں جو آنسو آئے وہ ہم نہیں بھلا سکتے، جن والدین نے اپنا بیٹا دھرتی پر قربان کر دیا سوچو ان کا جذبہ کیا ہو گا، انہیں تکلیف پہنچانے والے کو پاکستانی قوم کبھی معاف نہیں کرے گی، کشمیری عوام انشاءاللّٰه اس مجرم کو کبھی معاف نہیں کرے گی جو آج بنکر میں چھپ کر بیٹھا ہے، کشمیری عوام انشاءاللّٰه اس کو عبرت کا نشان بنائیں گے۔

سینئر نائب صدر مسلم لیگ نواز نے کہا کہ عمران خان نے صرف پاکستان کو اگ نہیں لگائی، صرف دفاعی تنصیبات کو تباہ نہیں کیا بلکہ امریکہ میں ٹرمپ کے پہلو میں بیٹھ کر کشمیر کا سودا بھی کیا، اس کو کشمیری عوام انشاءاللّٰه کبھی معاف نہیں کریں گے۔ لوگوں کو جلاؤ گھیراؤ، انتشار، نفرت اور فتنہ کی سیاست سے عمران خان یاد آتا ہے۔ جب کسی کے پاس دکھانے کیلئے کوئی کارکردگی نہیں ہوتی تو وہ ایسی ہی حرکتیں کرتا ہے۔

مریم نواز شریف کا کہنا تھا کہ میں ابھی راستے میں پوسٹرز پڑھ رہی تھی جن پر لکھا تھا کہ کشمیر کی بیٹی کشمیر کے اندر، مریم نواز شریف صرف کشمیر کی بیٹی نہیں بلکہ مریم نواز شریف کی رگوں میں کشمیر کا سَچّا اور سُچّا خون ہے، مریم نواز خون کے رشتے کے ساتھ کشمیر سے جڑی ہوئی ہے، یہ کوئی سیاسی نعرہ نہیں ہے بلکہ مریم نواز خالص کشمیری ہے۔

چیف آرگنائزر مسلم لیگ نواز نے کہا کہ جس جماعت کو 2021 میں دھاندلی کر کے آزاد کشمیر پر مسلط کیا گیا تھا، آج وہ جماعت کہاں ہے؟ وہ جماعت وہیں چلی گئی ہے جہاں سے آئی تھی۔ جس نے نواز شریف کی سیاست ختم کرنے اور مسلم لیگ نواز کو توڑنے اور ٹکڑے ٹکڑے کرنے کا پلان بنایا، وہ جماعت خود کرچیوں میں تقسیم ہو گئی جبکہ نواز شریف اور مسلم لیگ نواز اللّٰه تعالیٰ کے فضل و کرم سے آج بھی موجود ہیں۔ جو آزاد کشمیر میں اس جماعت کا وزیراعظم تھا، آج وہی گواہی دے رہا ہے کہ 9 مئی کے حملے عمران خان نے پلان کیے تھے۔

مریم نواز شریف نے کہا کہ اگر کسی جماعت نے کشمیر کی ترقی و خوشحالی کیلئے کام کیا ہے تو وہ مسلم لیگ نواز ہے۔ پرویز مشرف سے لے کر اب تک نواز شریف کے بہت سارے دشمن آئے مگر ناکام ہوئے کیونکہ نواز شریف پاکستان اور کشمیر کا بیٹا ہے، نواز شریف نے بدترین وقت دیکھا، اپنی حکومتیں قربان کیں اور بڑی مشکلات کا سامنا کیا مگر پاکستان اور کشمیر پر آنچ نہیں آنے دی۔ جو کہتا تھا “میں کلا ہی کافی آں” وہ آج کل “کلا” بیٹھ کر رو رہا ہے، آج کل وہ لوگ صبح، دوپہر، شام اور رات روتے ہیں جبکہ وہ جس مسلم لیگ نواز کو رلانا چاہتے تھے وہ آج بھی الحمدللّٰه ڈٹ کر کھڑی ہے۔ نواز شریف جب بھی اقتدار میں آتا ہے تو کراچی سے خیبر تک اور مظفر آباد سے باغ تک ترقی نظر اتی ہے۔

انہوں نے شرکاء سے سوال پوچھا کہ جب آپ موٹر وے، بجلی کے کارخانے، پورے پاکستان اور کشمیر میں سڑکوں کے جال، ہسپتال، سکولز، یونیورسٹیز اور 2017 میں ترقی کرتی معیشت دیکھتے ہیں تو کون یاد آتا ہے؟ پاکستان کو وجود میں آئے 75 سال گزر گئے، نواز شریف کے 9 سال نکال دو تو باقی کچھ نہیں رہتا۔ تاریخ میں پہلی بار نواز شریف نے آزاد کشمیر کیلئے ایک کھرب روپے ترقی کا بجٹ رکھا اور صرف بجٹ نہیں دیا بلکہ ایک ایک پائی اللّٰه تعالیٰ کو حاضر و ناظر جان کر آپ کی تعمیر و ترقی پر خرچ کی۔ یہاں ہمارے سابق وزراء اور وزیراعظم بھی کھڑے ہیں، آج تک کوئی ان پر کرپشن کا الزام تک نہیں لگا سکا کیونکہ سب کچھ ایمانداری کے ساتھ خرچ کیا گیا مگر 2021 میں آنے والی حکومت نے کشمیر کیلئے کچھ نہیں کیا اور جو کام ہو رہا تھا اس کو بھی رکوا دیا بلکہ اپنا خرچ چلانے کا ذمہ بھی گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کی حکومتوں کے سپرد کر دیا تھا۔

مریم نواز شریف نے کہا کہ آزاد کشمیر میں ہر طرف نواز شریف کی بنائی ہوئی سڑکیں نظر آتی ہیں، ایک بار پھر الیکشن آنے والا پے، ترقی آپ کا حق ہے، اچھی سڑکیں آپ کا حق ہے، اچھے ہسپتال آپ کا حق ہے، اچھے سکول آپ کا حق ہے، اچھے کالجز آپ کا حق ہے، اچھی یونیورسٹیز اپ کا حق ہے، یہاں نواز شریف نے دل کا ہسپتال بنانے کا بھی اعلان کیا تھا جو نہیں بن سکا، آپ مشتاق منہاس کو ووٹ دیں، انشاءاللّٰه میں مشتاق منہاس کے ساتھ مل کر وہ ہسپتال بناؤں گی۔ آپ جس دن ووٹ دینے نکلیں اس دن اپنے دل پر پاتھ رکھ کر پوچھنا کہ آزاد کشمیر میں ترقی کے منصوبے کس نے لگائے؟ اگر دل یہ گواہی دے کہ یہاں ترقی و خوشحالی کے تمام منصوبے صرف نواز شریف نے بنائے تو پھر ووٹ بھی صرف نواز شریف کا ہونا چاہیے۔

مسلم لیگ نواز کی چیف آرگنائزر کا کہنا تھا کہ مجھے آج تک 2021 کا باغ والا جلسہ نہیں بھولا اور اج آپ نے ایک بار پھر کمال کر دیا، آج تک میرے موبائل میں اس کی تصاویر اور ویڈیوز موجود ہیں جنہیں میں اکثر بہت محبت کے ساتھ بار بار دیکھتی ہوں۔ مسلم لیگ نواز کو مٹانے والے کئی آئے اور چلے گئے لیکن اللّٰه تعالیٰ کے فضل و کرم سے نواز شریف اور مسلم لیگ نواز کل بھی تھے، آج بھی ہیں اور انشاءاللّٰه کل بھی رہیں گے۔ وہ وقت دور نہیں جب صرف باغ نہیں بلکہ آزاد کشمیر کے طول و عرض میں انشاءاللّٰه صرف نواز شریف کا نام گونجے گا اور انشاءاللّٰه وہ وقت بھی دور نہیں جب پاکستان میں بھی ایک بار پھر وزیراعظم نواز شریف کا نعرہ گونجے گا اور ترقی کا سفر جہاں 2017 میں ٹوٹا تھا، انشاءاللّٰه نواز شریف کی واپسی کے ساتھ وہیں سے دوبارہ شروع ہو گا۔

مریم نواز شریف نے کہا کہ 8 تاریخ کو جب ووٹ دینے نکلنا ہے تو اکیلے نہیں نکلنا بلکہ اپنی فیملی اور دوستوں کو بھی ساتھ لے کر نکلنا ہے اور شیر پر مہر لگانی ہے۔ الیکشن کے دن جذبے کے ساتھ نکلنا، باغ کے ساتھ محبت کیلئے نکلنا، مشتاق منہاس کو ووٹ ڈالنا، اپنی ترقی کو ووٹ ڈالنا اور شیر پر مہر لگانا۔

انہوں نے آخر میں “کشمیر بنے گا پاکستان” کا نعرہ بھی لگایا۔

Read more

میاں نواز شریف! یہ ملک بہت بدل چکا ہے

مسلم لیگ ن کے لوگوں پر جب عتاب ٹوٹا تو وہ ’نیویں نیویں‘ ہو کر مزاحمت کے دور میں مفاہمت کا پرچم گیٹ نمبر 4 کے سامنے لہرانے لگے۔ بہت سوں نے وزارتیں سنبھالیں اور سلیوٹ کرنے ’بڑے گھر‘ پہنچ گئے۔ بہت سے لوگ کارکنوں کو کوٹ لکھپت جیل کے باہر مظاہروں سے چوری چھپے منع کرتے رہے۔ بہت سے لوگ مریم نواز کو لیڈر تسیلم کرنے سے منکر رہے اور نواز شریف کی بیٹی کے خلاف سازشوں میں مصروف رہے۔

Celebrity sufferings

Reham Khan details her explosive marriage with Imran Khan and the challenges she endured during this difficult time.

نواز شریف کو سی پیک بنانے کے جرم کی سزا دی گئی

نواز شریف کو ایوانِ اقتدار سے بے دخل کرنے میں اس وقت کی اسٹیبلشمنٹ بھرپور طریقے سے شامل تھی۔ تاریخی شواہد منصہ شہود پر ہیں کہ عمران خان کو برسرِ اقتدار لانے کے لیے جنرل باجوہ اور جنرل فیض حمید نے اہم کردارادا کیا۔

ثاقب نثار کے جرائم

Saqib Nisar, the former Chief Justice of Pakistan, is the "worst judge in Pakistan's history," writes Hammad Hassan.

عمران خان کا ایجنڈا

ہم یہ نہیں چاہتے کہ ملک میں افراتفری انتشار پھیلے مگر عمران خان تمام حدیں کراس کر رہے ہیں۔

لوٹ کے بدھو گھر کو آ رہے ہیں

آستین میں بت چھپائے ان صاحب کو قوم کے حقیقی منتخب نمائندوں نے ان کا زہر نکال کر آئینی طریقے سے حکومت سے نو دو گیارہ کیا تو یہ قوم اور اداروں کی آستین کا سانپ بن گئے اور آٹھ آٹھ آنسو روتے ہوئے ہر کسی پر تین حرف بھیجنے لگے۔

حسن نثار! جواب حاضر ہے

Hammad Hassan pens an open letter to Hassan Nisar, relaying his gripes with the controversial journalist.

#JusticeForWomen

In this essay, Reham Khan discusses the overbearing patriarchal systems which plague modern societies.
spot_img
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
error: